بانو قدسیہ انتقال فرما گئیں۔ ۔ ۔

انا للہ وانا اليه راجعون۔ ۔
نہایت دکھ اور افسوس ۔ ۔ ۔بانو قدسیہ صاحبہ کا انتقال فرماگئیں۔ ۔ اردو ادب ہی نہیں ہمارے معاشرتی اقدار اور خصوصا عورتوں کہ لیے انکی تحریریں نا قابل فراموش ہیں اور رہیں گی۔ ۔ ۔ بانو آپا کا کمال بہ تھا کہ عورت کو بغاوت پہ اکسائے بغیر بہادر اور نڈر بنے کی ہمت اور حوصلہ دلایا کرنی تھیں۔ ۔ ۔ جو صوفی ایزم اور درویشی ہمیں اشفاق احمد مرحوم میں دیکھتی تھیں وہی بانو آپا میں بھی پائ جاتی تھی۔ ۔ ۔ معاشرے میں تیزی سے آتی تبدیلی اس کہ زندگی گھر اور معاشرے پہ پڑھنے والے منفی اثرات کی نشان دہی انہوں نے بہت پہلے اپنی تحریروں کہ زریعے کرتی رہیں۔ ۔ ۔
انکی شخصیت انکی تحریروں پر بہت کچھ لکھا جا سکتا ہے مگر انکے لیے انکے انداز ان حسیے دو لفظ بھی لکھنا میرے بس کا نہیں۔ ۔ ۔
اللہ تعالی انکی مغغرت فرمائے جنت الفردوس عطا فرمائے آمین۔ ۔ ۔
ساریہ صدیقی
#بانوقدسیہ #BanoQudsiya

Aaey Bablo Kahan Say Labba Ooey….!!

Freedom Of Speech ! Kya Sirf Mazhab k Khelaf bakwas k liya…???

وما أرسلناك إلا رحمة للعالمين

وما أرسلناك إلا رحمة للعالمين
جشن ولادت نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم مبارک
#ہمارے_نبی

یہ “کس صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم “ کی آمد کی برکتیں ہیں۔ ۔ ۔ ۔

فرقوں میں اٹے مسلمان

SuperMoon In Pakistan

ہشیار۔ ۔ ۔

Batey India HeroPanti Sirf Filmo mian chalti ha

خود کو تقسیم نہ کرنا میرے سارے لوگو

اب میرے دوسرے بازو پہ وہ شمشیر ہے جو
اس سے پہلے بھی میرا نصف بدن کاٹ چکی

اُسی بندوق کی نالی ہے میرے سمت کے جو
اس سے پہلے میری شہرت کا لہو چاٹ چکی

پھر وہی یاد در آئی ہے میری گلیوں میں
پھر میرے ذہین میں بارود کی بو پھیلی ہے

پھر سے تو کون ہے ، میں کون ہوں ، آپس میں سوال
پھر وہی سوچ میانِ منِ تو پھیلی ہے

میری بستی سے پرے بھی میرے دشمن ہوں گے
پر یہاں کب کوئی اغیار کا لشکر اترا

آشنا ہاتھ ہی اکثر میری جانب لپکے
میرے سینے میں میرا اپنا ہی خنجر اترا

پھر وہی خوف کی دیوار تذبذب کی فضا
پھر وہی عام وہ ہی اہل رِیا کی باتیں

نعرہ حبِ وطن مالِ تجارت کی طرح
جنسِ ارضا کی ظرح دین خدا کی باتیں

اس سے پہلے بھی تو ایسی ہی گھڑی آئی تھی
صبح وحشت کی طرح شام غریباں کی طرح

اس سے پہلے بھی تو عہد و پیمانِ وفا ٹوٹے تھے
شیشہِ دل کی طرح آئینہِ جاں کی طرح

پھر کہاں ہیں مری ہونٹوں پہ دعاوں کے دیئے
پھر کہاں شبنمی چہروں پہ رفاقت کی وِداع

صندلی پاؤں سے مستانا روی روٹھ گئ
ململی ہاتھوں پہ جل بجھ گیا گارِحنا

دل نشیں آنکھوں میں فرقت زدہ کاجل رویا
شاخِ بازو کے لئے زلف کا بادل رویا

مثلِ پیراہنِ گل پھر سے بدن چاک ہوئے
جیسے اپنوں کی کمانوں میں ہوں اغیار کے تیر

اس سے پہلے بھی ہوا چاند محبت کا ندیم
نوکِ دشتاں سے کھیچی تھی میری مٹی کی لکیر

آج ایسا نہیں ، ایسا نہیں ہونے دینا
اے میری سوختہ جانوں، میرے پیارے لوگو

اب کےگر زلزلے آئے تو قیامت ہوگی
میرے دلگیر، میرے درد کے مارے لوگو

کیسی غاصب، کسی ظالم، کسی قاتل کے لیے
خود کو تقسیم نہ کرنا میرے سارے لوگو

نہیں ، ایسا نہیں ہونے دینا
نہیں ایسا نہیں ہونے دینا
ایسا نہیں ہونے دینا

#احمدفراز

یوم آزادی

قائد اعظم محمد علی جناح کے فرمان

‫#‏یوم_آزادی_پاکستان‬ ‪#‎Jashan_e_Aazadi2016‬ ‪#‎Pakistan‬ ‪#‎Quaid_e_Aazam‬ ‪#‎MohammadAliJinnah‬
‪#‎IndependenceDay‬

قائدِ اعظم محمد علی جناح

Image may contain: 1 person , text

اے پاک وطن تجھے میرا خدا

#‏یوم_آزادی_پاکستان‬ ‪#‎Jashan_e_Aazadi2016‬ ‪#‎Pakistan‬
‪#‎IndependenceDay‬

 

وطن سے رشتہ

‫#‏یوم_آزادی_پاکستان‬ ‪#‎Jashan_e_Aazadi2016‬ ‪#‎Pakistan‬
‪#‎IndependenceDay‬

%d bloggers like this: