ایک تم بھی سہی ۔۔۔۔۔۔"

ایک تم بھی سہی ۔۔۔۔۔۔"

یہ داستاں بھی عجیب ہے نہ ان کہی نہ کہی

ہر ایک شام کے منظر

بچھڑ گئے ہم سے

وہ گہری نیند بھی کھوئی

وہ رتجگے بھی گئے

اداس آنکھوں سے

رُخصت ہوئے سارے خواب

خود اپنے آپ میں گم ہوگئے ہیں سب احباب

بس ایک تم تھے

جیسے زندگی سمجھتے تھے

بس ایک تم تھے

مگر تم بھی ساتھ چھوڑ گئے

جُدا ہوئے ہیں جہاں اور

ایک تم بھی سہی

                                               تسلیم الہٰی زلفیؔ

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: