بھنورکی گود میں اپنے لئے ساحل بناتا ہے

بھنورکی گود میں اپنے لئے ساحل بناتا ہے

جہاں منزل نہیں ہوتی وہیں منزل بناتا ہے

بہت آسان کاموں سے اُسے الجھن سی ہوتی ہے

سو ہر آسان کو اپنے لئے مشکل بناتا ہے

کسی بھی مسئلے کو مسئلہ رہنے نہیں دیتا

وہ ناممکن کو امکانات کے قابل بناتا ہے

وہ ذھن و دل سے مل کر روز و شب تشکیل دیتا ہے

جہاں پر ذھن ہوتا ہے وہیں پر دل بناتا ہے

وہ اپنی کوششوں کو یک جہت رہنے نہیں دیتا

جہاں پر حال بنتا ہے وہ مستقبل بناتا ہے

ارادہ ہو تو سارے کام وہ کرتا ہے عجلت میں

سفر کرنے کا منصوبہ سرِ منزل بناتا ہے

یاد صدیقیؔ

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: