تعلق

تعلق

اسلام کہتا ہے اللہ سے تعلق قائم کرو۔۔۔۔، اسے اپنا لو۔۔۔۔، اسے اپنا جانو۔۔۔۔ ، جیسے تم بھائی بہن ۔۔۔۔،والدین یا دوستوں کو اپنا جانتے ہو۔۔۔۔ تعلق کوئی کام نہیں بلکہ رویّہ ہے۔۔۔۔ اور رویّہ تو ہر وقت قائم رہتا ہے۔۔۔۔ گھڑی کے جیسے۔۔۔۔، ہر وقت ٹِک ٹِک کرتا رہتا ہے۔۔۔۔

اگر آپ سمجھتے ہیں کہ ۔۔۔پانچوں وقت جائے نماز پر کھڑے ہو کر اللہ کو سلام کرنے سے اللہ سے تعلق بیدا ہو جائے گا۔۔۔۔، تو یہ آپ کی بھول ہے۔۔۔۔ اللہ سے تعلق پیدا کرنا ہے تو۔۔۔ اسے انگلی لگا کر ساتھ ساتھ لیے پھرو۔۔۔۔، کھانا کھانے لگو تو پاس بھٹالو۔۔۔۔ کہو یار آج تونے مجھے اتنی ساری نعمتیں دے دیں۔۔۔۔ رات کو سونے لگو تو اسے ساتھ لٹا لو۔۔۔۔، کہو واہ میرے دوست سارا دن قدم قدم پر تو نے میرا ساتھ دیا ہے۔۔۔، کیا خوب ساتھ دیا ہے سبحان اللہ۔۔۔۔۔ اللہ سے تعلق تو ایسا ہونا چاہیے جیسے۔۔۔ ماں سے ہوتا ہے۔۔۔۔ تھک جاؤ تو اس کی گود میں سر رکھ دو"۔

ممتاز مفتی کی کتاب“  تلاش “ سے اقتباس

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: