کس سے گلہ کرے کوئی ۔۔۔۔۔۔


کس سے گلہ کرے کوئی ۔۔۔۔۔۔

 

آج پوری دنیا کے مسلمان سراپا احتجاج ہیں۔۔۔

کیوں کے ہمارے نبی صلی اللہ علیہ وآلٰہ وسلم کی شانِ اقدس میں گستاخی کی جارہی ہے۔۔۔۔

ہمارا غصہ ہمارا احتجاج سب صحیح۔۔۔

لیکن اس سب میں ایک بات میرے ذہن میں بار بار آرہی ہے۔۔۔

کہ آج یہ سب کچھ جو ہو رہا ہے۔۔۔

اس میں کچھ قصور ہمارا اپنا بھی ہے۔۔۔۔

آج دنیا کی اتنی ہمت ہوئی ہے۔۔۔ تو اس لیے ۔۔۔ کہ ہم نے انہیں موقع دیا ہے ۔۔۔

ہمارا ملک پاکستان۔۔۔

جو کہ اسلامی جمہوریہ پاکستان کہلاتا ہے۔۔۔۔

ہمارے ملک میں حال یہ ہے ۔۔۔ کہ یہاں پچھلے سال حضور ﷺ ۔۔۔ کی زندگی پر بنایا گیا ڈرامہ اردو زبان میں ڈبنگ کر کے دیکھایا جارہا تھا۔۔۔

ہزاروں احتجاج کو پسِ پُشت رکھتے ہوئے۔۔۔ پورا ڈرامہ اپنی پوری آب و تاب کے ساتھ دکھایا گیا۔۔ بلکہ رپیٹ کر کر کے دیکھایا گیا۔۔۔ اور اردو ترجمعہ کے ساتھ انٹرنیٹ پر بھی اپلوڈ کر دیا گیا۔۔۔۔حضرت نوح علیہ السلام۔۔۔ حضرت موسیٰ علیہ السلام۔۔۔ حضرت عیسیٰ علیہ السلام۔۔۔ اور بہت سے صحابہ اکرام پر بنے والی فلمیں۔۔۔ ہمارے اسلامی جمہوریہ پاکستان ۔۔۔

میں دھڑلے سے چلتی رہتی ہیں۔۔۔اس سال بھی رمضان میں بھی کچھ ٹی وی چینلز پر ایسے ڈرامے اور فلمیں نشر ہوتی رہیں۔۔۔

مجھ جیسی سوچ رکھنے والے کچھ لوگ۔۔۔ بھرپور اور لگاتار ان چیزوں پر احتجاج کرتے رہے۔۔۔بہت سے لوگ میڈیا پر بھی دکھائی دیئے جو ان مویز اور ڈراموں کے خلاف غصے کا اظہار کر رہے تھے۔۔۔ مگر سب بے سود کوئی سننے والا تھا نہ ماننے والا۔۔۔۔۔۔۔۔

اور وہ ڈرامے اور فلمیں چل رہے تھے۔۔۔ اور مکمل ہونے تک چلتے رہے ۔۔۔۔

اب آج کا دن ہے۔۔۔ ہم پھرسراپا احتجاج ہیں۔۔۔اُن ہی لوگوں کے آگے جن کے بنائےہوئے ڈرامے ہم نے بڑی شان سے اردو میں ڈبنگ کر کے دیکھائے۔۔۔

پتا نہیں کیوں مگر۔۔۔۔

میرے ذہن میں یہ خیال بار بار آرہا ہے۔۔۔

کہ شاید آج ہم ہی لوگوں نے ہی کسی نہ کسی طرح ان کی ہمت بندھائی ہے ۔۔۔ کہ آج ان لوگوں کی اتنی مجال ہوگئی ۔۔۔ کہ ہمارے ﷺ کے حوالے سے فلمیں بنانے سے باز نہیں آئے ۔۔۔ کاش ہم نے ان ڈراموں اور خاکوں پر ۔۔۔ اتنا احتجاج کیا ہوتا۔۔۔ اُن غم و غصے کا صرف لفظی نہیں۔۔۔ بلکہ عملی اظہار بھی بھرپور طریقے سے کیا ہوتا۔۔۔ تو شاید آج یہ دن نہ دیکھنا پڑھتا۔۔۔۔۔

اگر۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ہم نے اپنے احتجاج میں کچھ عملی اقدامات کئے ہوتے۔ ۔۔۔ان ممالک کی مصنوعات کا مکمل طور پر بائےکاٹ کیا ہوتا ۔۔۔ ہمارے ملک کے حکمران اتنے دلیر ہوتے کہ ان سے تمام تر سفارتی تعلقات ختم کر دیتے۔۔۔ ہم لوگوں نے پہلے ہی بننے والی موویز خواہ وہ کسی بھی پیغمبرکی شان میں گستاخی پر مبنی تھیں ۔۔۔ یا صحابہ کرام رضی اللہ عنہم پر۔۔۔ بھر پور احتجاج کیا ہوتا۔۔۔ صرف اور صرف تقریریں ۔۔۔۔یا۔۔۔۔ جذباتیت کا مظاہرہ نہ کیا ہوتا ۔۔۔ تو آج یہ دن نہ دیکھنا پڑتا۔۔۔۔۔

مگر نہیں۔۔۔۔۔۔۔۔

ہمارا غصہ تو بس صابن کا جھاگ ہی ہوتا ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔

جو تھوڑی دیر بعد ختم۔۔۔۔۔۔

پھر ہمارا گزارا یو ٹیوب کے بغیر نہیں ہوگا۔۔۔۔

قمر جمال امروہوی صاحب کا ایک شعر۔۔۔کل سے یہی شعر میرے دماغ میں گھوم رہا ہے۔۔۔

کس کا گلہ کرے کوئی اپنوں کے ہاتھ سے

وہ زخم بھی لگے ہیں جو ناسور ہوگئے

 

شاید یہ ہمارے اپنوں کے دیئے ہوئے زخم بھی ہیں۔۔۔ جو آج ناسور کی طرح سرائیت کرتے جارے ہیں۔۔۔

کاش۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اسلامی جمہوریہ پاکستان کے چینلز پر ہمارے پیغمبروں پر بنے والے فلمیں۔۔۔ اور ڈرامے نہ چلے ہوتے۔۔۔

کاش جیو ٹی وی والوں نے ہماری اُن شکایات پر نوٹس لیاہوتا۔۔۔ کہ نبی کریم ﷺ کی حیاتِ مبارکہ پر بننے والے ڈرامے کو نہ دکھایا جائے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

کاش ہمارے میڈیا نے ہمارے علماء کرام کی باتوںاورمفتی صاحبان کے فتوں پر کان دھرے ہوتے۔۔ کہ سب دیکھنا دکھانا حرام ہے۔۔۔۔۔۔۔

تو شاید آج غیروں سے شکوہ کرتے ہوئے۔۔۔۔۔ ہمارے سینے بھی چوڑے ہوتے۔۔۔۔۔۔۔

لیکن آج جب ہمارے ملک میں بھی بہت احتجاج ہورہاہے۔۔۔۔ غم ہے ۔۔۔ غصہ ہے۔۔۔۔۔ لیکن جانے کیوں ۔۔۔

مجھے ایسا محسوس ہوتا ہے۔۔۔۔۔۔

کہ کہیں نہ کہیں اُن اسلام دشمن قوتوں کی اتنی ہمت افزائی کرنے والے ہم لوگ بھی تو ہیں۔۔۔۔ جن کے ملک میں نبی کریم ﷺ کی حیات پر بنے والے ڈرامے۔۔۔۔ پیغمبروں پر بنے والی موویز ہر خاص موقع پر چلتی ہی رہتی ہیں۔۔۔۔۔

گو کے آج ہم ۔۔۔۔۔۔۔۔ غیروں کے آگے سراپا احتجاج ہیں۔۔۔۔۔

کیوں کے ہم اُمتِ محمدی ﷺ ہیں۔۔۔۔۔۔۔

جو روزِ محشر ۔۔۔ نبی کریم ﷺ ۔۔۔کی شفاعت۔۔۔ اور ان کے وسیلے سے بخشش کی آس لگائے بیٹھے ہیں۔۔۔۔

مجھے تو لگتا ہے۔۔۔ ہم تو آپﷺ کے آگے اپنا منہ لے کے جانے کے قابل بھی نہیں ہیں۔۔۔۔۔

اللہ تعالیٰ ہمیں عملی طور پر سچا عاشقِ رسول ﷺ ۔۔۔۔

اور بہترین اورقول و فیل کا کھرا مسلمان بنے کی توفیق عطا فرمائے ۔۔۔۔

آمین ثمہ آمین

ساریہ صدیقی

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: