ہم اکثر یہ سمجھتے ہیں

ہم اکثر یہ سمجھتے ہیں
جسے ہم پیار کرتے ہیں ،اُسے ہم چھوڑ سکتے ہیں،
مگر ایسا نہیں ہوتا ، محبت داہمی سچ ہے
محبت ٹہر جاتی ہے
ہماری بات کے اندر، ہماری ذات کے اندر
مگر یہ کم نہیں ہوتی
کسی بھی دکھ کی صورت میں
کبھی کوئی ضرورت میں
کبھی انجان سے غم میں
ہماری آنکھ کے اندر کبھی اآبِ رواں بن کر
کبھی قطرے کی صورت میں
محبت ٹھر جاتی ہے
یہ ہر گز کم نہیں ہوتی

 

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: