خواب دیکھا گیا

خواب دیکھا گیا۔۔۔۔”

خواب دیکھا گیا

ہم بھی آزاد ہوں

ہم بھی آباد ہوں

اہل ایمان کی

سرزمیں ہو الگ

خواب دیکھا گیا

جس کی تعبیر لانے کو سب اٹھ پڑے

خوردوپیر و جواں

عظمتوں کے نشاں

جراتوں کی زباں

ولولوں کی اذاں

کہکشاں ‘ کہکشاں

آسماں ‘ آسماں

ایک قائد کے پرچم تلے سب چلے

ایک قائد جسے

سب نے اپنا کہا

اپنا ‘ اپنا کہا

وہ محمد علی

آرزو کی کلی

روشنی بن گیا

زندگی بن گیا

سب مسلماں چلے ایک پرچم تلے

خواب پورا ہوا

اک وطن مل گیا

اک چمن مل گیا

بانکپن مل گیا

وہ محمد علی

جس کو بھیجا گیا تھا ‘ ہمارے لیے

آسمانوں کے سب

استعارے لیے

سبز پرچم کے

چاند تارے لیے

گلشنِ پاک کے

رنگ سارے لیے

اتحاد و یقین کے

سہارے لیے

پھول آشاؤں کے

ڈھیر سارے لیے

کچھ ہمارے لیے

کچھ تمہارے لیے

وہ محمد علی

آرزو کی کلی

ایک مدِ جری

ہم پہ سایہ فگن

کوہ و دشت و دمن

اور چمن در چمن

روشنی بن گیا

زندگی بن گیا

                                تسلیم الہٰی زلفی

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: